1. This site uses cookies. By continuing to use this site, you are agreeing to our use of cookies. Learn More.
  2. آپس میں قطع رحمی نہ کرو، یقینا" اللہ تمہارا نگہبان ہے۔یتیموں کا مال لوٹاؤ، اُن کے اچھے مال کو بُرے مال سے تبدیل نہ کرو ۔( القرآن)

  3. شرک کے بعد سب سے بڑا جرم والدین سے سرکشی ہے۔( رسول اللہ ﷺ)

  4. اگر تم نے ہر حال میں خوش رہنے کا فن سیکھ لیا ہے تو یقین کرو کہ تم نے زندگی کا سب سے بڑا فن سیکھ لیا ہے۔(خلیل جبران)

نگاہوں کا اشارہ کھو گیا ہے

'میری شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از سیدعلی رضوی, ‏دسمبر 7, 2017۔

  1. سیدعلی رضوی

    سیدعلی رضوی یونہی ہمسفر

    نگاہوں کا اشارہ کھو گیا ہے

    وہ جو چلتا تھا آرا کھو گیا ہے


    یہاں اب گرمی محفل نہیں ہے

    پس چلمن شرارا کھو گیا ہے


    زہے قسمت تمہارے زیر پا دل

    زہے قسمت دوبارہ کھو گیا ہے


    تموج اٹھ رہا ہے دل سے لیکن

    تھا جو پہلو سہارا کھو گیا ہے


    ہمار گھر ڈبوئیں گی یہ موجیں

    سمندر کا کنارہ کھو گیا ہے


    متاع جان اب کچھ بھی نہیں ہے

    جو تھا سارے کا سارا کھو گیا ہے


    ہے اپنی ارتقا کو بھول بیٹھا

    تھا جو مشہور گارا کھو گیا ہے
     
    زبیر اور عمراعظم .نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. عمراعظم

    عمراعظم یونہی ایڈیٹر Staff Member

    واہ۔۔۔ بہت خوب
     
    زبیر اور سیدعلی رضوی .نے اسے پسند کیا ہے۔
  3. سیدعلی رضوی

    سیدعلی رضوی یونہی ہمسفر

    شکریہ جناب
     
    زبیر اور عمراعظم .نے اسے پسند کیا ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں