1. This site uses cookies. By continuing to use this site, you are agreeing to our use of cookies. Learn More.
  2. آپس میں قطع رحمی نہ کرو، یقینا" اللہ تمہارا نگہبان ہے۔یتیموں کا مال لوٹاؤ، اُن کے اچھے مال کو بُرے مال سے تبدیل نہ کرو ۔( القرآن)

  3. شرک کے بعد سب سے بڑا جرم والدین سے سرکشی ہے۔( رسول اللہ ﷺ)

  4. اگر تم نے ہر حال میں خوش رہنے کا فن سیکھ لیا ہے تو یقین کرو کہ تم نے زندگی کا سب سے بڑا فن سیکھ لیا ہے۔(خلیل جبران)

خواب کے اس جہاں سے گزر جائیں گے

'میری شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از سیدعلی رضوی, ‏مئی 3, 2018۔

  1. سیدعلی رضوی

    سیدعلی رضوی یونہی ہمسفر

    خواب کے اس جہاں سے گزر جائیں گے
    یعنی ہم آسماں سے ہو کر جائیں گے

    خوش خرامی کریں آپ دل میں مرے
    پاؤں نازک سے لے کر کدھر جائیں گے

    دیکھ کر دشت سا شہر دل میں سکوں
    کیا خبر تھی ہمیں آپ ڈر جائیں گے

    آپ اپنا پتہ دیں نہ دیں خیر ہے
    دل جدھر جاۓ گا ہم ادھر جائیں گے

    ہم ادھر جائیں گے جان سے بے خبر
    جان ہی جاۓ گی بال و پر جائیں گے

    وصل ہم کو ہی ہم سے کرے غیر خود
    سانس ٹل جاۓ گی ہم کہ مرجائیں گے

    آپ خوشبو سا لہجہ بدلنے نہ دیں
    وہ جو بدلہ تو ہم بھی بکھر جائیں گے

    منفعت آپ سے وصل کی ہوگی یہ
    میرے سارے شگوفے آپ پر جائیں گے

    ابو لویزا علی

    سید علی رضوی
     

اس صفحے کو مشتہر کریں