1. This site uses cookies. By continuing to use this site, you are agreeing to our use of cookies. Learn More.
  2. آپس میں قطع رحمی نہ کرو، یقینا" اللہ تمہارا نگہبان ہے۔یتیموں کا مال لوٹاؤ، اُن کے اچھے مال کو بُرے مال سے تبدیل نہ کرو ۔( القرآن)

  3. شرک کے بعد سب سے بڑا جرم والدین سے سرکشی ہے۔( رسول اللہ ﷺ)

  4. اگر تم نے ہر حال میں خوش رہنے کا فن سیکھ لیا ہے تو یقین کرو کہ تم نے زندگی کا سب سے بڑا فن سیکھ لیا ہے۔(خلیل جبران)

جن کے ماتھے پہ چھاپ رہتے ہیں

'میری شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از سیدعلی رضوی, ‏جنوری 17, 2018۔

  1. سیدعلی رضوی

    سیدعلی رضوی یونہی ہمسفر

    جن کے ماتھے پہ چھاپ رہتے ہیں
    دل میں کتنے ہی پاپ رہتے ہیں
    مخمصہ ہے کہ ساکنِ دل یہ
    یار ہیں یا کہ سانپ رہتے ہیں
    یہ جو بیروں ہے کرب کا منظر
    اندروں میرے آپ رہتے ہیں
    عارض و گیسو و قبا خوش کن
    ہم تخیل میں ناپ رہتے ہیں
    خوش خرامی ہمارے دل میں وہ
    دبے قدموں کی چاپ رہتے ہیں
    دل گرفتہ تپش زدہ سینہ
    سرد آہوں میں بھاپ رہتے ہیں
     
  2. زبیر

    زبیر منتظم Staff Member

    لاجواب جناب۔۔
    بہت پیاری غزل ہے ۔۔ :)
     

اس صفحے کو مشتہر کریں